فضائل رمضان المبارک – فصل اوّل

رمضان المبارک ہجری تقویم کا نواں مہینہ ہے جس میں مومنین پر روزے فرض کیے گئے ہیں۔

سرکار دو عالم صل اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا کہ جو شخص ایک روزہ اللہ کے واسطے رکھے تو اللہ ﷻ اس محفوظ رکھے ستر برس کی دوزخ کی راہ سے۔ اور مزید فرمایا رسول خدا صل اللہ علیہ وآلہ وسلم نے کہ جو کوئی ایک روزہ خاص خدا کے لئے رکھے اس کو اللہ تعالی دوزخ سے دور کرے۔

اور فرمایا آنحضرت صل اللہ علیہ و آلہ وسلم نے  کہ جب کوئی روزہ رکھتا ہے تو اس کے واسطے آسمان کے دروازے کھل جاتے ہیں۔ اول آسمان والے اس کے لئے شام تک تسبیح و استغفار کرتے ہیں اور اگر اس دن نفل پڑھے تو آسمانوں پر نور ظاہر ہوتا ہے اور حوریں اس کی مشتاق ہوتی ہیں۔ اور اگر تہلیل و تسبیح اور تکبیر بھی کرے ستر ہزار فرشتے آکر اس کا شام تک ثواب لکھتے ہیں۔

اور فرمایا شافع محشر  صل اللہ علیہ و آلہ وسلم نے کہ روزہ داروں کے واسطے قیامت کے دن دسترخوان بچھایا جائیگا کہ وہ ان پر اچھے اچھے کھانے کھائیں گے۔

فرمایا سرکار دو عالم صل اللہ علیہ و آلہ وسلم نے  قیامت کے دن روزہ دار اپنی قبروں سے جب اٹھیں گے تو اپنے منہ کی خوشبو سے پہچانے جائینگے جو کہ مُشک سے زیادہ پیاری ہوگی ور ان کے روبرو فرشتے خوان کھانے کے اور ظروف پانی کے مُشک کی مہر لگی ہوئی لا کر رکھیں گے کہ کھاؤ تم کہ بھوکے رہے ہو اور پیو تم کہ پیاسے رہے تھے۔ اور آرام کرو کہ تم نے مشقتیں اٹھائی تھیں۔

Tagged , , , , , , , . Bookmark the permalink.

جواب دیجئے